Raza e Muhammad
رضائے محمد ﷺ پر آپ کو خوش آمدید



 
HomeGalleryFAQUsergroupsRegisterLog in
www.kanzuliman.biz.nf
Raza e Muhammad

Hijri Date

Latest topics
» نماز کے اوقات (سوفٹ وئیر)
Wed 14 Aug 2013 - 4:43 by arshad ullah

» بے مثل بشریت
Tue 12 Feb 2013 - 6:53 by Administrator

» Gucci handbags outlet online
Thu 17 Jan 2013 - 2:19 by cangliang

» hermes Birkin 30
Thu 17 Jan 2013 - 2:18 by cangliang

» CHRISTIAN LOUBOUTIN EVENING
Sun 13 Jan 2013 - 6:06 by cangliang

» Cheap Christian Louboutin Flat
Sun 13 Jan 2013 - 6:05 by cangliang

» fashion CHRISTIAN LOUBOUTIN shoes online
Sun 13 Jan 2013 - 6:05 by cangliang

» Christian Louboutin Evening Shoes
Wed 9 Jan 2013 - 5:36 by cangliang

» CHRISTIAN LOUBOUTIN EVENING
Wed 9 Jan 2013 - 5:35 by cangliang

Search
 
 

Display results as :
 
Rechercher Advanced Search
Flag Counter

Share | 
 

 تیمم کا بیان

View previous topic View next topic Go down 
AuthorMessage
Administrator
Admin
Admin
avatar

Posts : 1220
Join date : 23.02.2009
Age : 36
Location : Rawalpindi

PostSubject: تیمم کا بیان   Thu 1 Jul 2010 - 7:04

تیمم کا بیان

اگر کسی وجہ سے پانی کے استعمال پر قدرت نہ ہو تو وضو اور غسل دونوں کیلئے تیمم کر لینا جائز ہے مثلاً ایسی جگہ ہو کہ وہاں چاروں طرف ایک میل تک پانی کا پتہ نہ ہو۔ یا پانی تو قریب ہی میں ہو مگر دشمن یا درندہ جانور کے خوف یا کسی دوسری وجہ سے پانی نہ لے سکتا ہو یا پانی کے استعمال سے بیمار ہو جانے یا بیماری کے بڑھ جانے کا اندیشہ اور گمان غالب ہو تو ان صورتوں میں بجائے وضو اور غسل کے تیمم کرنے کا ایک ہی طریقہ ہے۔

مسئلہ:- مٹی، ریت، پتھر گیرو وغیرہ ہر اُس چیز سے تیمم ہو سکتا ہے جو زمین کی جنس سے ہو۔ لوہا، پتیل، کپڑا، رانگا، تانبا، لکڑی وغیرہ سے تیمم نہیں ہو سکتا کہ جو کہ زمین کی جنس سے نہیں ہیں۔ یاد رکھو کہ جو چیز آگ سے جل کر نہ رکاھ ہوتی ہے۔ نہ پگھلتی ہے وہ زمین کی جنس سے ہے جیسے مٹی وغیرہ اور جو چیز آگ سے جل کر راکھ ہو جائے یا پگھل جائے وہ زمین کی جنس سے نہیں۔ جیسے لکڑی اور سب دھاتیں۔ (عامہ کتب)

مسئلہ:- راکھ سے تیمم جائز نہیں۔ (عالمگیری)

مسئلہ:- گچ کی دیوار اور پکی اینٹ سے تیمم جائز ہے اگرچہ ان پر غبار نہ ہو اسی طرح مٹی۔ پتھر وغیرہ پر بھی غبار ہو یا نہ ہو بہرحال تیمم جائز ہے۔ (عامہ کتب)

مسئلہ:- مسجد میں سویا تھا اور نہانے کی حاجت ہوگئی تو فوراً ہی تیمم کرکے جلد مسجد سے نکل جائے۔

مسئلہ:- کسی وجہ سے نماز کا وقت اتنا تنگ ہوگیا کہ اگر وضو کرے گا تو نماز قضاء ہو جائے گی تو چاہئیے کہ تیمم کرکے نماز پڑھ لے۔ پھر اس پر لازم ہے کہ وضو کرکے اُس نماز کو دپرائے۔ (درمختار و ردالمحتار ج1 ص164)

مسئلہ:- اگر پانی موجود ہو تو قرآن مجید کو چھونے، یا سجدہء تلاوت کیلئے تیمم کرنا جائز نہیں۔ بلکہ وضو کرنا ضروری ہے۔ (رد المحتار ج1 ص164)

مسئلہ:- جس جگہ سے ایک شخص نے تیمم کیا اُسی جگہ سے دوسرا بھی تیمم کر سکتا ہے۔ (بہار شریعت ج2 ص70)

مسئلہ:- عوام میں جو یہ مشہور ہے کہ مسجد کی دیوار یا زمین سے تیمم ناجائز یا مکروہ ہے، یہ غلط ہے مسجد کی دیوار اور زمین پر بھی تیمم بلا کراہت جائز ہے۔ (بہار شریعت ج1 ص70)

مسئلہ:- تیمم کیلئے ہاتھ زمین پر مارا اور چہرہ اور ہاتھوں پر ہاتھ پھرانے سے پہلے ہی تیمم ٹوٹنے کا کوئی سبب پایا گیا تو اس سے تیمم نہیں کر سکتا۔ بلکہ اس کو لازم ہے کہ دوباری ہاتھ زمین پر مار کر تیمم کرے۔ (بہار شریعت ج1 ص70 وغیرہ)

مسئلہ:- جن چیزوں سے وضو ٹوٹتا ہے یا غسل واجب ہوتا ہے اُن سے تیمم بھی جاتا رہے گا۔ اور ان کے علاوہ پانی کے استعمال پر قادر ہو جانے سے بھی تیمم ٹوٹ جائے گا۔ (عامہ کتب فقہ

=================================================================================
خدا کی رضا چاہتے ہیں دو عالم
خدا چاہتا ہے رضائے محمد



قیصر مصطفٰی عطاری
http:www.razaemuhammad.co.cc
Back to top Go down
View user profile http://razaemuhammad.123.st
 
تیمم کا بیان
View previous topic View next topic Back to top 
Page 1 of 1

Permissions in this forum:You cannot reply to topics in this forum
Raza e Muhammad :: اسلامی فقہ :: فقہ حنفی-
Jump to:  
Free forum | © phpBB | Free forum support | Contact | Report an abuse | Sosblogs